ارشادِ نبوی

آنحضرتﷺ کی دیگر انبیاء پر فضیلت

وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ أَيُّوبَ، وَقُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيْدٍ، وَعَلِيُّ بْنُ حُجْرٍ، قَالُوْا حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيْلُ وَهُوَ ابْنُ جَعْفَرٍ عَنِ الْعَلَاءِ، عَنْ أَبِيْهِ، عَنْ أَبِيْ هُرَيْرَةَ، أَنَّ رَسُولَ اللّٰهِ صَلَّى اللّٰهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ’’فُضِّلْتُ عَلَى الْأَنْبِيَاءِ بِسِتٍّ أُعْطِيْتُ جَوَامِعَ الْكَلِمِ وَنُصِرْتُ بِالرُّعْبِ وَأُحِلَّتْ لِيَ الْغَنَائِمُ وَجُعِلَتْ لِيَ الْأَرْضُ طَهُورًا وَمَسْجِدًا وَأُرْسِلْتُ إِلَى الْخَلْقِ كَافَّةً وَخُتِمَ بِيَ النَّبِيُّونَ ۔‘‘

حضرت ابو ہريرہؓ سے روايت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا مجھے انبیاء پر چھ باتوں میں فضیلت دی گئی ہے۔ مجھے جوامع الکلم دیے گئے ہیں اور رعب سے مجھے مدد دی گئی ہے اور غنیمتیں میرے لیے جائز کی گئی ہیں اور زمين میرے لیے پاکیزگی کا ذريعہ اور مسجد بنائی گئی ہے اور مجھے سب مخلوق کی طرف بھیجا گيا ہے اور ميرے ذريعہ نبیوں پر مہر لگائی گئی ہے۔

(صحيح مسلم، کتاب المساجد و مواضع الصلوٰةباب الصلوٰۃ فی ثوب واحد وصفۃ لبسہ حدیث رقم 853)

مزید دیکھیں

متعلقہ مضمون

رائے کا اظہار فرمائیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close