پیغام حضور انور

جلسہ سالانہ ڈنمارک کے موقع پر حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایّدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کا خصوصی پیغام

جلسہ سالانہ ڈنمارک کے موقع پر حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایّدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کا خصوصی پیغام

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

نحمدہ و نصلی علی رسولہ الکریم و علی عبدہ المسیح الموعود

خدا کے فضل اور رحم کے ساتھ

ھو النّاصر

اسلام آباد (یوکے)

01-09-2021

پیارے احباب جماعت احمدیہ ڈنمارک

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

اللہ تعالیٰ کا بےحد فضل ہے کہ جماعت احمدیہ ڈنمارک کو اس سال بھی اپنا جلسہ سالانہ منعقد کرنے کی توفیق مل رہی ہے۔ یاد رکھیں کہ یہ جلسے ایک خاص مقصد لیے ہوتے ہیں۔ حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام نے جن مقاصد کےلیے جلسے کا اہتمام فرمایا ان میں سے ایک تو یہ ہے کہ دینی فائدہ اُٹھانے کا موقع ملے۔ خدا تعالیٰ کی معرفت محض اس کے فضل سے بڑھے اور بڑھانے کی توفیق ملے۔ تیسرے یہ کہ آپس میں محبت، پیار، اخوت اور بھائی چارہ بڑھے اور چوتھے یہ کہ تبلیغی سرگرمیوں کی طرف توجہ پیدا ہو۔۔کیونکہ ایک احمدی سے اس ماحول میں جو جلسے کا ماحول ہے یہ توقع کی جاتی ہے کہ ان دنوں میں جہاں وہ دینی باتیں سن کر دینی علم بہتر کرنے کی کوشش کرے، اپنی دینی اور روحانی حالت کو سنوارتے ہوئے خدا تعالیٰ کی معرفت میں بڑھنے کی کوشش کرے۔ اور خدا تعالیٰ کی معرفت میں بڑھنے کے لیے عبادات اور ذکر الٰہی بہت اہم ہیں۔ جب یہ ایک کوشش سے کی جائے تو خدا تعالیٰ کے فضلوں کو جذب کرتے ہوئے معرفت الٰہی میں ترقی کا باعث ہوتی ہے۔ حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی بعثت کا یہی مقصد ہے کہ اس جماعت میں شامل ہونے والے افراد میں اللہ تعالیٰ کا تقویٰ پیدا ہو اور معرفت میں ترقی کریں۔ آپ علیہ السلام فرماتے ہیں:

’’خدا تعالیٰ نے مجھے اس لیے مامور کیا ہے کہ تقویٰ پیدا ہو اور خدا تعالیٰ پر سچا ایمان جو گناہ سے بچاتا ہے پیدا ہو۔ خداتعالیٰ تاوان نہیں چاہتا بلکہ سچا تقویٰ چاہتا ہے‘‘۔

( ملفوظات جلد 3 صفحہ 100 جدیدایڈیشن مطبوعہ ربوہ)

اس وقت دنیا کے جو حالات ہیں اس میں ہر احمدی کو اپنی حالتوں میں تبدیلی پیدا کرنی چاہیے ۔ پہلے سے بڑھ کر خدا کے حضور جھکنا چاہیے۔ خدا کے قرب کے حصول کےلیے گریہ زاری کریں۔

سیّدنا حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام فرماتے ہیں:

’’خداتعالیٰ کی عظمت اپنے دلوں میں بٹھاؤ اور اس کے جلال کو اپنی آنکھوں کے سامنے رکھو……دنیا کی خوشحالی کی شرطوں سے خدا تعالیٰ کی عبادت مت کرو کہ ایسے خیال کےلیے گڑھا درپیش ہے۔ بلکہ تم اس لیے اس کی پرستش کرو کہ پرستش ایک حق خالق کا تم پر ہے۔ چاہیے پرستش ہی تمہاری زندگی ہوجاوے اور تمہاری نیکیوں کی فقط یہی غرض ہو کہ وہ محبوب حقیقی اور محسن حقیقی راضی ہوجاوے کیونکہ جو اس سے کمتر خیال ہے وہ ٹھوکر کی جگہ ہے۔ خدا بڑی دولت ہے ۔ اس کے پانے کے لیے مصیبتوں کے لیے تیار ہوجاؤ۔ وہ بڑی مراد ہے اس کے حاصل کرنےکےلیے جانوں کو فدا کرو… خدا تعالیٰ کے حکموں کو بے قدری سے نہ دیکھو۔ موجودہ فلسفہ کی زہر تم پر اثر نہ کرے۔ ایک بچے کی طرح بن کر اس کے حکموں کے نیچے چلو۔ نماز پڑھو ۔ نماز پڑھو کہ وہ تمام سعادتوں کی کنجی ہے…نماز میں بہت دعا کرو اور رونا اور گڑ گڑانا اپنی عادت کرلو تاتم پر رحم کیاجائے۔‘‘

(ازالہ اوہام ، روحانی خزائن جلد 3 صفحہ 548-549)

خدا کرے کہ آپ سب اللہ تعالیٰ سے ذاتی تعلق پیدا کرنے اور اس کی عبادت کا حق ادا کرنے کی توفیق پانے والے ہوں۔ آپ وہ خوش نصیب لوگ ہیں جن کو اس زمانہ کےامام حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کو ماننے کی توفیق ملی۔پھر اللہ تعالیٰ نے آپ پر بڑا احسان فرمایا ہے کہ آپ کو خلافت کی نعمت سے نوازاہے جس کے ذریعہ آپ کے تزکیہ نفس کے سامان پیدا کیے ہیں۔ پس اس عظیم نعمت کی قدر کریں اور خلافت کے ساتھ ہمیشہ وفا اور اخلاص کا تعلق قائم رکھیں اور دین کو دنیا پر غالب کرنے کا جو عہد کیا ہوا ہے اس عہد کو نبھائیں اور اپنی اولاد در اولاد کو ہمیشہ خلافت سے وابستہ رہنے اور اس کی برکات سے مستفیض ہونے کی تلقین کرتے رہیں۔

اللہ تعالیٰ آپ کے ساتھ ہو۔آپ کو تقویٰ کی راہوں پر قدم مارنے کی توفیق بخشے اور اپنی حفظ و امان میں رکھے۔ آمین

والسلام۔ خاکسار

(دستخط)مرزا مسرور احمد

خلیفۃ المسیح الخامس

متعلقہ مضمون

رائے کا اظہار فرمائیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

For security, use of Google's reCAPTCHA service is required which is subject to the Google Privacy Policy and Terms of Use.

I agree to these terms.

Back to top button
Close