افریقہ (رپورٹس)

کانووکیشن 2020ء جامعۃ المبشرین گھانا

محض اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے جامعۃ المبشرین گھانا کو مورخہ 30؍اگست 2020ء بروز اتوار اپنے کانووکیشن کے انعقاد کی توفیق ملی ہے۔ الحمد للہ علیٰ ذالک۔

گزشتہ سالوں میں اس تقریب میں طلباء کے والدین، عزیز و اقارب، علاقہ کے چیف صاحبان، نیشنل مجلس عاملہ کے ممبران، مختلف مہمانان کرام اور مکرم امیر و مشنری انچارج صاحب گھا نا شامل ہو اکرتے تھے۔ لیکن اس مرتبہ ایسا سب کچھ ممکن نہ تھا مگر پھر بھی ہماری کوشش تھی کہ طلباء کی اس تقریب کو بہت حد تک اچھا اور بھر پور بنایا جائے۔

یہ تقریب حکومت گھانا کی طرف سے وضع کردہ اصولوں کے مطابق منعقد کی گئی۔ اس سال کورونا وائرس کے باعث کسی مہمان کو مدعو نہیں کیا گیا اور صرف جامعہ کے غیر ملکی طلباء جو پہلے ہی جامعہ میں رہائش پذیر تھے اور اساتذہ جامعہ اس پروگرام میں شریک ہوئے۔ اس پروگرام کے لئے پندرہ ممالک کے جھنڈے مع لوائے احمدیت لہرائے گئے تھے۔ یہ پروگرام جامعہ کے ہال میں منعقد کیا گیاجس کے لیے ہال کو خاص طور پر سجایا گیا تھا۔ سٹیج پر اس تقریب کے حوالہ سے ایک بہت بڑا بینر لگایا گیا تھا۔

اس تقریب کے مہمانِ خصوصی کے فرائض خاکسار نے بطورپرنسپل جامعۃ المبشرین گھانا ادا کیے۔

اس تقریب سے قبل خاکسار نے لوائے احمدیت جبکہ گھانا کا جھنڈا مولوی طاہر احمد ظفر صاحب استاد جامعۃ المبشرین نے لہرایا۔ تلاوت قرآنِ کریم سے تقریب کا باقاعدہ آغاز ہوا جو Djalo Ahmaduجن کا تعلق گنی بساؤ سے ہے نے کی اور پھر گھانا سے تعلق رکھنے والے ایک طالبِ علم Opoku Shariffصاحب نے حضرت اقدس مسیحِ موعودؑ کا اردو منظوم کلام ’حمدو ثنا اُسی کو ‘ مترنّم مع اس کا انگریزی زبان میں ترجمہ پیش کیا۔

اس کے بعد اس تقریب کا تعارف مولوی رضوان کوثر صاحب استاد جامعہ نے کروایا۔ آپ نے وضاحت سے بتایا کہ آجکل کے مخصوص حالات کے باعث یہ تقریب سادگی سے اس ہال میں کی جارہی ہے۔ بعد ازاں سال بھر میں ہونے والے علمی و ورزشی مقابلہ جات میں پوزیشنز لینے والے طلباء میں جامعہ کے اساتذہ نے انعامات تقسیم کیے۔ علمی مقابلہ جات میں صداقت گروپ اول رہا۔ اس کے انچارج استاذ مکرم حافظ لبیب عبداللہ صاحب اورگروپ سیکرٹری Abdul Jalal Esselنے انعامی ٹرافی وصول کی۔

ملک مالی کے تین طلباء Ali Tembine,Ahmadou Colibally,Abubacrine Maigaنے جولا زبان میں Songs of praise پیش کیا اور اس کا انگریزی ترجمہ بھی پڑھا۔ پھر خاکسار نے پاس ہونے والے 8ممالک کے 26طلباء کو قرآنِ کریم اور اسناد پیش کیں۔ اس کے بعد مڈغاسکر سے تعلق رکھنے والے دو طلباء Moussa Basil ,Hamidou Takiنے حضرت مسیحِ موعود علیہ السلام کا عربی قصیدہ ’یا قلبی اذ کر احمدا‘ ترنم سے پڑھا۔

بعد ازاں خاکسار نے حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کے ارشادات کی روشنی میں واقفِ زندگی کے فرائض کے موضوع پر کچھ گزارشات کیں۔ نیز گزشتہ تین سالوں میں جامعہ احمدیہ انٹرنیشنل گھانا کے کانووکیشن کے موقع پر بھیجے جانے والے حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ بنصرہ العزیزکے پیغامات میں سے بعض حوالے پڑھ کر سنائے۔

گھانا سے تعلق رکھنے والے دو طلباء Opoku Shariff, Ahmad bin Ismail Jnr نے گھانین Songs of praise پیش کیے اس کے بعد لائبیریا اور یوگنڈا سے تعلق رکھنے والے طلباء نے بھی گھانین Songs of praise پیش کیے ۔ آخر پر خاکسار نے دعا کروائی اس کے ساتھ اس پروگرام کا اختتام ہوا۔

اس موقع کی تاریخی حیثیت کی بدولت جامعہ سے پاس ہونے والے طلباء کی اساتذہ کے ساتھ تصاویر ہوئیں۔ پھر تمام شاملین کی خدمت میں طعام پیش کیا گیا۔ بعد ازاں نماز ظہرو عصر جمع کر کے پڑھی گئیں۔ الحمد للہ اس طرح جامعۃ المبشرین کی تقریب تقسیم اسناد انتہائی کامیابی کے ساتھ اپنے اختتام کو پہنچی۔ اس پروگرام کی تیاری کے لیے جامعۃ المبشرین کے طلباء اور اساتذہ نے بڑی محنت سے کام کیا۔اللہ تعالیٰ سب کو جزائے خیر دے۔ اللہ تعالیٰ ان فارغ التحصیل ہونے والے تمام طلباء کو اسلام احمدیت کے لیے انتہائی مفید وجود بنائے اور انہیں اسلام احمدیت کا پیغام دنیا کے کونے کونے میں پھیلانے کی توفیق عطا فرمائے اور جامعۃ المبشرین کے تمام اساتذہ اور دیگر کارکنان کو بھی بہترین خدمات کی توفیق عطا فرمائے۔آمین

(رپورٹ : فہیم احمد خادم۔ نمائندہ الفضل انٹرنیشنل)

مزید دیکھیں

متعلقہ مضمون

رائے کا اظہار فرمائیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close