صحتمتفرق مضامین

کورونا وائرس اور متوازن غذا

(فریدہ نرگس۔ کلینیکل نیوٹریشنسٹ)

2020ء کے آغاز سے ہی عالمی سطح پر کورونا وائرس کے خلاف جنگ لڑی جا رہی ہے۔ سائنسی تجربہ کار اور تحقیق دان دن رات اسی کوشش میں مصروف ہیں کہ کورونا وائرس کے لیے کوئی ویکسین بنائی جائے۔ لیکن قابل افسوس بات یہ ہے کہ سائنس کی اتنی ترقی کے باوجود ابھی تک ہمارے پاس کوئی دوا یا علاج نہیں ہے۔ ماضی میں SARSکی وبا سے یہ بات عیاں ہو چکی ہے کہ کورونا وائرس کتنا مہلک ہے۔ اس کی علامات میں بخار، کھانسی، سانس لینے میں دشواری اور گلے میں خراش شامل ہے۔ یہ بھی ممکن ہے کہ کورونا سے لاحق افراد میں کوئی علامت نہ ہو۔ سائنسدانوں کے مطابق وہ لوگ جن کی عمر 65سال سے زیادہ ہے اور وہ لوگ جو پہلے ہی کسی بیماری میں مبتلا ہیں کورونا وائرس ان کے لیے زیادہ خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔ ان میں وہ لوگ سرفہرست ہیں جن کو ذیابیطس، دل کی بیماری، بلڈ پریشر، دمہ یا پھیپھڑوں کی بیماری ہے۔ یہ بات بہت تشویشناک ہے کیونکہ دنیا بھر میں ہر تین میں سے ایک انسان کو ان میں سے کوئی نہ کوئی بیماری لاحق ہے۔ حالیہ اعدادوشمار کے مطابق اٹلی میں کورونا وائرس کے باعث ہلاکتوں میں 14.4فیصد وہ لوگ شامل تھے جن کو کوئی ایک non- communicable(غیر مواصلاتی )بیماری ضرور تھی۔ اسی طرح 21.1فیصد ہلاکتیں ان لوگوں کی تھیں جن کو پہلے سے ہی کوئی دو بیماریاں تھیں۔ اور ایک بڑی تعداد 60.9فیصد ان لوگوں کی تھی جن کو پہلے سے تین بیماریاں تھیں۔

مختلف تحقیقات ظاہر کرتی ہیں کہ متوازن غذا کا استعمال ہی قوت مدافعت کو طاقتور بنا سکتا ہے۔ غذائی ماہرین کے مطابق متوازن غذا کا استعمال کرنے والے لوگوں کی قوت مدافعت، غیرمتوازن غذا کا استعمال کرنے والوں سے کافی بہتر ہوتی ہے۔

موجودہ صورت حال میں جہاں کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے مختلف ممالک لاک ڈاؤن ،سماجی فاصلہ اور self isolation جیسے اقدامات کر رہے ہیں، وہاں ایک متوازن غذا کا حصول اور ایک healthy life styleکو اپنانا خاصا مشکل ہو جاتا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ غلط معلومات کا پھیلاؤ انسان کو پریشان کر دیتا ہے۔ آج کل سوشل میڈیا پر کورونا وائرس کے خلاف مختلف ٹوٹکے سامنے آ رہےہیں۔ مثلاً sana makkiکا استعمال، مختلف قسم کے قہوہ جات کا استعمال، supplements کا استعمال وغیرہ۔ یہ جاننا ضروری ہے کہ یہ تمام غیر مصدقہ اور غیر تحقیق یافتہ باتیں ہیں۔sana makki ایک ایسی طاقتور جڑی بوٹی ہے جس کے استعمال سے پیٹ کا درد ، متلی، اسہال جیسے مضر اثرات ہو سکتے ہیں۔ ان اشیاء میں پائی جانے والی مختلف جڑی بوٹیاں جن کو کورونا وائرس کے خلاف موثر بتایا جا رہا ہے اکثر و بیشتر گردے اور جگر کی بیماریوں کا باعث بنتے ہیں۔ ڈاکٹر کی تجویز کے بغیر zinc supplements کا استعمال آپ کے جسم میں زنک کی مقدار کو خطرناک حد تک بڑھا سکتا ہے۔ جس کی وجہ سے Vomitting Nausea, Abdominal painجیسی تکالیف ہو سکتی ہیں۔ بات یہاں ختم نہیں ہوتی بلکہ اس کی جسم میں زیادتی کے باعث قوت مدافعت میں کمی آ سکتی ہے۔ اس لیے ہمیشہ supplementsکا استعمال صرف ڈاکٹر کی تجویز سے کیا جائے۔

موجودہ صورت حال میں یاد رکھیں کہ صرف وٹامن۔سی کے supplementکے استعمال سے قوت مدافعت مضبوط بن سکتا ہے جو عام حالات میں مرد وںکو روزانہ 90mgجبکہ خواتین کو 75mgدرکار ہیں۔

موجودہ حالات میں یہ جاننا ضروری ہے کہ وہ کونسی غذائیں ہیں جو ہمیں کورونا کے خلاف مدد دے سکتی ہیں۔ درج ذیل چند مصدقہ غذائی تدابیر ہیں جو کورونا کے خلاف مثبت کردار ادا کرتی ہیں۔

٭…روزانہ کم از کم 2کپ درمیانے سائز کے کٹے ہوئے پھل کا استعمال کریں۔ان میں امرود،سیب،کیلا، سٹرابیری، چکوترا، خربوزہ،انناس،پپیتے کے استعمال کو ترجیح دیں۔

٭…تازہ سبزی کا استعمال کریں۔اس میں شملہ مرچ، گوبھی، بند گوبھی، ادرک، لہسن، لیموں،خشک دھنیے کے استعمال کو ترجیح دیں۔

٭…بکرے اور گائے کا گوشت ہفتے میں 2-1بار استعمال کریں۔

٭…مرغی کا استعمال ہفتے میں دو سے تین بار کریں۔

٭…اپنے کھانے میں خالص اور unprocessed اشیاء کا استعمال کریں۔

٭…روزانہ کم از کم8سے10گلاس پانی کا استعمال کریں۔

٭…روزانہ ورزش ضرور کریں۔ مثلاً تیز چلنا، سائیکل چلانا، رسہ رسی پھلانگنا وغیرہ

٭…کھانا پکاتے ہوئے سبزیوں کو زیادہ نہ پکائیں کیونکہ ایسا کرنے سے اہم وٹامن اور mineralsکا نقصان ہوتا ہے۔

٭…اگر cannedیا driedپھل اور سبزیوں کا استعمال کرنا ہو تو ایسی ہوں جن میں اضافی نمک اور چینی نہ ہو۔

٭…بازاری مشروب کا استعمال کم کیا جائے۔

٭…گھر میں کھانا پکائیں۔

٭…کوکنگ آئل کا استعمال کریں۔

٭…ایک صحت مندانہ زندگی اپنائیں، جو متوازن غذا، جسمانی ورزش اور حسب ضرورت نیند پر مشتمل ہو۔

تاحال کوئی ایسی تحقیق سامنے نہیں آئی جس سے یہ بات ثابت ہو سکے کہ کورونا وائرس کھانے پینے کی اشیاء سے بھی منتقل ہو سکتا ہے۔ لیکن حفظان صحت کے اصولوں کو کھانا بناتے وقت اور باہر سے کھانا منگواتے وقت لازماً اپنانا چاہیے۔

٭…پھل اور سبزیوں کو استعمال کرنے سے پہلے اچھی طرح دھو لینا چاہیے۔

٭…کچی اور پکی ہوئی اشیاء کو علیحدہ رکھیں۔ Food services میں کام کرنے والے ورکرز کھانا بناتے وقت glovesکا استعمال کریں۔

٭…کھانے والی دکانوں میں جراثیم کش دوا سے کاؤ نٹر کی صفائی کریں۔

٭…ڈاکٹروں اور تحقیق دانوں کی ہدایات کے مطابق ماسک، صابن، hand sanitizerکا استعمال کرتے ہوئے اپنے اور اپنے پیاروں کے لیے سماجی فاصلہ برقرار رکھیں۔

اللہ تعالیٰ سب کو اس بیماری سے محفوظ رکھے اور جلد اس وباء کا خاتمہ ہو۔آمین

٭…٭…٭

مزید دیکھیں

متعلقہ مضمون

رائے کا اظہار فرمائیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close