ارشادِ نبوی

ارشاد ِنبوی ﷺ

حضرت ابو حنیفہؒ بیان کرتے ہیں کہ ایک دفعہ میں مسجد حرام میں داخل ہوا تو لوگوں کا ایک بڑا مجمع دیکھا۔ مَیں نے اپنے والد سے پوچھا یہ لوگ کس کے گرد اکٹھے ہیں۔ میرے والد نے بتایا کہ یہ حلقہ آنحضرت صلی اللہ علیہ و سلم کے صحابی عبد اللہ بن جزء الزبیدیؓ کا ہے۔ یہ سن کر مَیں ان کی طرف بڑھا تو انہیں یہ کہتے ہوئے سنا کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا: ’’ جو اپنے اندر تفقُّہ فی الدین پیدا کرتا ہے اللہ تعالیٰ اس کے ہم و غم کا خود متکفل ہو جاتا ہے اور اس کے لیے ایسی ایسی جگہوں سے رزق کے سامان مہیا کرتا ہے کہ جس کا اسے وہم و گمان بھی نہیں ہوتا۔‘‘

(شرح مسند ابی حنیفۃ الجزء 1 صفحہ 585)

مزید دیکھیں

متعلقہ مضمون

رائے کا اظہار فرمائیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close