کلام حضرت مسیح موعود ؑ

منظوم کلام حضرت اقدس مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ و السلام

(ذیل کے اشعار جلسہ سالانہ یوکے 2019ء کے موقع پر افتتاحی اجلاس میں پڑھے گئے )

ہمیں اُس یار سے تقویٰ عطا ہے

نہ یہ ہم سے کہ احسانِ خدا ہے

کرو کوشش اگر صدق و صفا ہے

کہ یہ حاصل ہو جو شرطِ لقا ہے

ہر اک نیکی کی جڑھ یہ اتّقا ہے

اگر یہ جڑھ رہی سب کچھ رہا ہے

ڈرو یارو کہ وہ بِینا خدا ہے

اگر سوچو، یہی دارُالجزاء ہے

مجھے تقویٰ سے اس نے یہ جزادی

فَسُبحَانَ الَّذِی اَخزَی الاَعَادِی

عجب گوہر ہے جس کا نام تقویٰ

مبارک وہ ہے جس کا کام تقویٰ

سنو! ہے حاصل اسلام تقویٰ

خدا کا عشق مے اور جام تقویٰ

مسلمانو! بناؤ تام تقویٰ

کہاں ایماں اگر ہے خام تقویٰ

یہ دولت تو نے مجھ کو اے خدا دی

فَسُبحَانَ الَّذِی اَخزَی الاَعَادِی

مزید دیکھیں

متعلقہ مضمون

رائے کا اظہار فرمائیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close